Lyrics – Pyasi Hai Sakina(s.a) – Nasir Hussain Zaidi

صحفہ اول / اردو نوحے / ناصر حسین زیدی / پیاسی ہے سکینہ

ناصر حسین زیدی
ناصر حسین زیدی

شاعر:
نوحہ خواں: ناصر حسین زیدی
سال : —–
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

بچوں کا تمہیں واسطہ یہ بھول نہ جانا
پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

یہ سوچ کے جی کھول کے تم اشک بہانا
پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

ہاۓ مجلس جہاں ہوگی وہاں ارے آتی ہے سکینہ
ارے پانی نہ ملا آج بھی پیاسی ہے سکینہ
پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

اللہ کرے آۓ کبھی ایسا زمانہ
ہو شام کے زنداں کی طرف آپ کا جانا
ارے پھٹ جاۓ گا دل دیکھ کے وہ غم کا ٹھکانہ
ارے بے حال ہوئ قبر میں ارے سوتی ہے سکینہ
ارے پانی نہ ملا آج بھی پیاسی ہے سکینہ
پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

ارے یوں جانب دریا گۓ عباس دلاور
اور دریا سے مشکیزہ بھرا با دل مضطر
دریا کی ہر اک موج یہ کہتی تھی تڑپ کر
ہے تیسرا دن ہاۓ ارے تڑپتی ہے سکینہ
ارے پانی نہ ملا آج بھی پیاسی ہے سیکنہ

پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

ارے شام آگئی جب چھانے لگا بن میں اندھیرا
زینب نے کیا بھائ کے لاشے پہ یہ نوحہ
ارے کیا تم نے سکینہ کو کہیں دیکھا ہے بھیا
اک کونے میں سہمی ہوئ ارے بیٹھی ہے سکینہ
ارے پانی نہ ملا آج بھی پیاسی ہے سکینہ
پیاسی ہے سکینہ ہاۓ پیاسی ہے سکینہ

__________________________________

www.xainabbas.wordpress.com

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s