Lyrics – Kya Kya Sitam Hussain(a.s) – Sachey Bhai

صحفہ اول / اردو نوحے / علی محمد رضوی سچے / کیا کیا ستم حسین کے دل پر گزر گۓ

نوحے خواں سچے بھائ نوحہ خواں سچے بھائ

شاعر: ——-
نوحہ خواں: سچے
سال : ——–
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


(اس ویڈیو میں مرحوم سچے بھائ کا یہ نوحہ ان کے فرزند علی رضوی نے  پڑھا ہے)

کیا کیا ستم حسین کے دل پر گزر گۓ
کیا کیا ستم حسین کے دل پر گزر گۓ

اکبر گزر گۓ علی اصغر گزر گۓ
کیا کیا ستم حسین کے دل پر گزر گۓ

مشکل تھی راہ حق میں ہر ایک منزل وفا
لے کر علی کا نام بہتّر گزر گۓ

فوجوں کو چیرتے ہوۓ عباس نامدار
میدان سے مثل حیدر صفدر گزر گۓ

جب یاد آگئ کبھی زینب کو کربلا
کیا کیا نظر کے سامنے منظر گزر گۓ

ارمان لاکھوں دل میں تھی مادر لیے ہوۓ
دن بیاہ کے جب آۓ تو اکبر گزر گۓ

گھوڑے نے آکے در پہ صدا دی یہ عصر کو
زہرا کے لال سبط پیعمبر گزر گۓ

دیکھا کیے ہزاروں تماشائ راہ میں
سر کو جھکاۓ آل پیعمبر گزر گۓ

دیتی رہی دہائ بہن بعد قتل شاہ
لاشوں کو روندتے ہوۓ لشکر گزر گۓ

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s