Lyrics – Qafla Ja Raha Hai Watan K liye – Sachey Bhai

صحفہ اول / اردو نوحے / علی محمد رضوی سچے / قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

نوحے خواں سچے بھائ نوحہ خواں سچے بھائ

شاعر: ——-
نوحہ خواں: سچے
سال : ——–
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں

قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے
کربلا میں قیامت کا اک شور ہے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

کوئ روتی ہے اپنے جواں لال کو
رورہی ہے کوئ کم سخن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

اپنی بربادیوں کو گوارہ کیا
خوں میں ڈوبے گلوں کا نظارہ کیا
دے دیا فاطمہ کا بھرا گلستاں
کربلا تیرے اجڑے چمن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

قصر ظالم کبھی قید خانہ کبھی
نوک نیزہ کبھی تازیانہ کبھی
کون سی تھی اذیت جو دی نہ گئ
ہر جفا تھی اسیر محن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

جب چلے تھے مدینے سے سب ساتھ تھے
عون و جعفر تھے اکبر تھے عباس تھے
جارہی ہوں مدینے تو کوئ نہیں
اب مصیبت فقط ہے بہن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

قبر قاسم سے ہے یوں مخاطب پھوپھی
تیری شادی کچھ اس طرح سے بن میں ہوئ
کوئ سہرے کا بھی پھول باقی نہيں
ورنہ لے جاتی قبر حسن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

کوئ چادر نہ تھی کیسی بے داد تھی
ہاتھ ہوتے ہوۓ بھی نہ آزاد تھی
کتنی مجبور کردی گئ تھی بہن
اپنے بھائ کے دفن و کفن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

کوئ روتی ہے اپنے جواں لال کو
رورہی ہے کوئ کم سخن کے لیے
قافلہ جارہا ہے وطن کے لیے

شائع کردہ

5 خیالات “Lyrics – Qafla Ja Raha Hai Watan K liye – Sachey Bhai” پہ

    1. Reply to Syed Ali Naqvi,
      سلام
      آپ کا بہت شکریہ، تصحیح کردی گئ ہے، التماس دعا براۓ کل مومنین و مومنات۔

      تاخیر کے لیے معذرت۔ ۔ ۔

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s