Lyrics – Wa Hasan-e-Sabz Qaba – Shahid Baltistani 2007

صحفہ اول / اردو نوحے / شاہد بلتستانی / و حسن سبز قبا

28 صفر المظفر
روز شہادت خاتم الانبیاء رسول خدا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم و نواسہ رسولۖ خدا حضرت امام حسن علیہ سلام کی مناسبت سے بارگاہ مقدس امام ولی العصر امام زمانہ عج اللہ تعالی فرجہ الشریف میں اور تمام شیعان جہان و امت مسلمہ کی خدمت میں دلی تعزیت و تسلیت عرض کرتا ہوں

شاہد بلتستانی
شاہد بلتستانی

شاعر : ریجان اعظمی
نوحہ خواں : شاہد بلتستانی
سال : 2007
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


یا حسن یاحسن یاحسن
یا حسن یاحسن یاحسن

بے خطا مارا گيا سبط رسولۖ دوسرا و حسن سبز قبا
زہر سے ٹکڑے جگر خون سے کفن لال ہوا و حسن سبز قبا

خوں اگلتے ہوۓ بھائ کو بہن نے دیکھا اور تڑپ کر یہ کہا
تیری غربت پہ اے بھائ تیری زینب ہو فدا و حسن سبز قبا

ماں کے دکھ سے ابھی آزاد کہاں تھی زینب ہوگیا کیسا غضب
باپ زندہ نہ رہا بھائ سوۓ خلد گیا و حسن سبز قبا

کردیا زہر ہلا ہل نے جگر کے ٹکڑے اور قاسم کے لیے
کمسنی میں ہے یہ غم شام غریباں جیسا و حسن سبز قبا

گھر سے اک بار جو جنازہ نکل جاتا ہے کب وہ پھر آتا ہے
ایسا تابوت ہے یہ لوٹ کے جو گھر آیا و حسن سبز قبا

شہہ نے اس وقت جو عباس کو نہ روکا ہوتا حشر ہوجاتا بپا
تیر آتے نہ جنازے پہ تمہارے مولا و حسن سبز قبا

شہہ کو ریجان برادر کا جگر یاد آیا جب سر کرب و بلا
ٹکڑے قاسم کے اٹھاتے ہوۓ مولا نے کہا و حسن سبز قبا

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s