Lyrics – Ghabraey Gi Zainab(s.a) – Nasir Jehan

صحفہ اول / اردو نوحے / مشہور و مــتـفــرق / گھبراۓ گی زینب

ناصر جہاں
ناصر جہاں

نوحہ خواں : ناصر جہاں
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب
بھیا تمہيں گھر جا کے کہاں پاۓ گی زینب

کیسا یہ بھرا گھر ہوا برباد الہی
کیا آئ تباہی
اب اس کو نہ آباد پاۓ گی زینب

گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب

گھر جا کے کسے دیکھے گی قاسم ہیں نہ عباس
اکبر سے بھی ہے آس
اپنے علی اصغر کو کہاں پاۓ گی زینب

گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب

پوچھیں گے جو سب لوگ کہ بازو کہ ہوا کیا
یہ نیل ہے کیسا
کس کس کو نشاں رسّی کے دکھلاۓ گی زینب

گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب

پھٹ جاۓ گا بس دیکھتے ہی گھر کو کلیجہ
یاد آؤ گے بھیا
دل ڈھونڈے گا تم کو اب کہاں پاۓ گی زینب

گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب

بے پردہ ہوئ قید بھی خواہر نے اٹھائ
پر موت نہ آئ
کیا جانیے کیا کیا ابھی دکھ پاۓ گی زینب

گھبراۓ گی زینب ‘ گھبراۓ گی زینب

Advertisements

شائع کردہ منجانب

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s