Wording – Ghar Mera Ujar K Reh Gaya – Mahum, Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK

صحفہ اول / اردو نوحے / ماہم، ثانیہ، ادعیہ ہاشم (غمخواران سکینہ)۔ / گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

Mahum Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK
Mahum Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK


شاعر : صـفـدر
نوحہ خواں :

Mahum, Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK
سال : 2008
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

کیا بتاؤں نانا جان کس قدر ہوۓ ستم
کربلا سے شام تک ہر قدم ملے ہیں غم
درد کی سنو ذرا اذاں گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

چھوڑ کر وطن چلا پراۓ دیس قافلہ
درد ، بیکسی ، اذیتوں کا سلسلہ ملا
کربلا جو پہنچا کارواں گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

ایک روز میں اجڑ گئ تھی آل مصطفیۖ
بچ سکا نہ ظلم کوئ جو بچا وہ ظلم تھا
ہو رہا تھا گریہ و فغاں گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

بازو کٹ گۓ فرات پر جری دلیر کے
مشک کیا چھدی کہ ٹوٹے حوصلے بھی شیر کے
ہوگۓ حرم بھی بے اماں گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

خاک پر رگڑ رہا ہے ایڑیاں جواں پسر
کھوگئ بصارت حسین جب سنی خبر
بین کررہی ہے رو کے ماں گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

میرے شیر میرے لاڈلے بھی رن میں سو گۓ
تین روز کے یہ بھوکے پیاسے قتل ہو گۓ
دشت میں تھا حشر کا سماں گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

ہاۓ بے زباں شیر خوار بھی نہ بچ سکار
حرملہ کے تیر سے گلا جو اس کا چھد گیا
تشنہ لب رہا وہ بے زباں گھر میرا اجڑ کے رہ گيا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

کیا کروں بیاں ناناۖ وقت وہ عجیب تھا
تشنہ لب حسین تیرا کس قدر غریب تھا
بھائ پہ تھا سخت امتحاں گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

بعد شاہ جل گۓ خیام چھن گئ ردا
اس دیار غیر میں نہ تھا کوئ بھی آسرا
بن گئ رسن سے بیبیاں گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لٹ کے آئ ہوں میں نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

لو صفدر حزیں قلم سے خون ہے رواں
بنت سیدہ کے بین سے لرز گیا جہاں
جب کہا کہ ہاۓ نانا جان گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

گھر میرا اجڑ کے رہ گیا
گھر میرا اجڑ کے رہ گیا

آن لائــن فـــرش عـــزا
http://www.xainabbas.wordpress.com

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s