Wording – Goonjti Sham-e-Ghariba Main – Hasan Sadiq 2006

صحفہ اول / اردو نوحے / حسن صادق / گونجتی شام غریباں میں

Hasan Sadiq
حسن صادق


شاعر : —-
نوحہ خواں : حسن صادق
سال : 2006
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


اجڑ گئ ہاۓ میں اجڑ گئ

گونجتی شام غریباں میں یہ زینب کی صدا
میرا کوئ نہ رہا
نہ رہے بھائ نہ بیٹے چھن گئ میری ردا
میرا کوئ نہ رہا

آسرے جس کے بہن چھوڑ کے آئ تھی وطن
میرے پردے کا جسے ماں نے بنایا ضامن
لب دریا میرے غازی کے ہوۓ بازو جدا
میرا کوئ نہ رہا

وہ جو اٹھارہ برس نوری حجابوں میں رہا
لوٹ کے آؤں گا میں جس نے تھا صغرا سے کہا
ہاۓ برچھی سے کلیجہ میرے اکبر کا چھدا
میرا کوئ نہ رہا

میرا غازی بھی گیا قاسم و اکبر بھی گئے
حر سا مہمان بھی گيا ابن مظاہر بھی گئے
کس کو غربت میں صدا دوں کربلا یہ تو بتا
میرا کوئ نہ رہا

ماں نے مقتل میں جسے دولہا بنا کر بھیجا
میرے قاسم کا بدن دشت میں پامال ہوا
بال کھولے ہوۓ روتی ہوئ لاشے سے کہا
میرا کوئ نہ رہا

وہ سکینہ کے جسے پیار تھا بابا سے بڑا
بعد بابا کے ملی جس کو طمانچوں کی سزا
در جو ظالم نے اتارے خون آنکھوں سے بہا
میرا کوئ نہ رہا

نہ رہے بھائ نہ بیٹے چھن گئ میری ردا
میرا کوئ نہ رہا
گونجتی شام غریباں میں یہ زینب کی صدا
میرا کوئ نہ رہا

آن لائــن فـــرش عـــزا
http://www.xainabbas.wordpress.com

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s