Wording – Shaam Ki Raah’on Mai – Mahum, Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK – 2010

صحفہ اول / اردو نوحے / ماہم، ثانیہ، ادعیہ ہاشم (غمخواران سکینہ)۔ / شام کی راہوں میں

Mahum Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK
Mahum Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK


شاعر : صفدر
نوحہ خواں :
Mahum, Saania & Adeeya Hashim (Ghamkhuran-e-Sakina) UK
سال : 2010
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں


سجاد کی غیرت نے دیکھے کیا منظر شام کی راہوں میں
دیکھا ہے سید زادیوں کو بےچادر شام کی راہوں میں

گردن کو جھکا کر روتا تھا جب دیکھا سجا بازاروں کو
بازار میں جب لاۓ ظالم بے پردہ پردے داروں کو
عابد کے جگر پر چلتا تھا اک خنجر شام کی راہوں میں

پرخار سفر کا غم تھا اور نہ صدمہ تھا خر بیڑھی کا
ایک درد شہہ مظلوم کا تھا اک غم تھا حرم ہیں بے پردہ
گزرہ ہے سفر بیمار کا بس رو رو کر شام کی راہوں میں

درّوں کی اذیت سہتا ہے زخموں سے خون بھی بہتا ہے
اور شام کے لوگوں سے آکر دل تھام کے بس یہ کہتا ہے
میں اتنا سوالی ہوں دے دو بس چادر شام کی راہوں میں

سجاد تڑپ کر کہتا تھا یہ شام کے لوگوں سے اکثر
اے شامیوں اتنا بتلاؤ کیوں رحم نہیں کھاتے ہم پر
اولاد پیعمبرۖ پر برسے کیوں پتھر شام کی راہوں میں

نیزے پہ جو دیکھا سر شہہ کا بیمار نے دل تھام لیا
فرمایا بابا دیکھیے تو امت نے کیسا حال کیا
پھرتا ہوں حرم کو ساتھ لیے میں در در شام کی راہوں میں

پردیس میں اپنے شہر کا ہر اک منظر یاد آجاتا تھا
وہ شان وشوکت سوچ کے ہی آنکھوں سے لہو برساتا تھا
آتا تھا مدینہ یاد اسے جب اکثر شام کی راہوں میں

نیزوں پہ سجا کر لاۓ تھے سر جنت کے سرداروں کے
یہ دیکھ کے دل روتے تھے اللہ نبیۖ کے پیاروں کے
سجاد کے آنسو گرتے تھے خون بن کر شام کی راہوں میں

جو درد سہے ہیں عابد نے تاریخ بھلاۓ گی کیوں کر
میں دیکھ رہا ہوں راہوں کو میں دیکھ رہا ہوں وہ منظر
ہاں اب بھی وہی بازار سجے ہیں صفدر شام کی راہوں میں

سجاد کی غیرت نے دیکھے کیا منظر شام کی راہوں میں

آن لائــن فـــرش عـــزا
http://www.xainabbas.wordpress.com

شائع کردہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s