Wording – Jahan Hussain Wahan La Ila’ha Ill’Allah – Nadeem Sarwar 2010

صحفہ اول / اردو نوحے / سید ندیم رضا سرور / جہاں حسین(ع) وہاں لا الہ الا اللہ

سید ندیم رضا سرور
سید ندیم رضا سرور

شاعر : ریحان اعظمی
نوحہ خواں : سید ندیم رضا سرور
سال : 2010
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں۔

آڈیو
یہ نوحہ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے نیچے دئیے گئے لنک پر کلک کریں
جہاں حسین(ع) وہاں لا الہ الا اللہ.MP3
(Right Click / Save Target as or copy paste the link into new browser)

ویڈیو
معذرت چاہتا ہوں کہ فی الحال اس نوحے کی ویڈیو نیٹ پر کہیں بھی مکمل نوحے کے ساتھ نہیں مل سکی۔


حسین حسین حسین
چراغ جلتا رہا
جو قافلہ تھا رواں
وہ قافلہ ہے رواں
سفر با نوک سناں
سناں کے ساتھ اذاں
بریدہ سر کی صدائيں فضا میں پھیل گئ
دریچوں آنگنوں گلیوں میں تپتے صحرا سے
زمینوں و عرش خلاؤں سے اور فضاؤں سے
دنوں میں رات میں جنگل میں کوہساروں سے
صدائيں آنے لگی اشھد ان لا الہ الا اللہ

یہ ایک بار ہوا اور لازوال ہوا
سناں کی نوک پہ سبحان ربی الاعلی
پکارا کلمہ توحید بھی جزاک اللہ
جہاں حسین وہاں لا الہ الا اللہ
خطیب نوک سناں لا الہ الا اللہ

جہاں حسین وہاں لا الہ الا اللہ
خطیب نوک سناں لا الہ الا اللہ

حسین دین بھی ہے اور دینیات بھی ہے
حسین کلمہ توحید کی حیات بھی ہے
حسین رمز خدا بھی خدا صفات بھی ہے
حسین بارہ اماموں کی کائنات بھی ہے
حسین سے ہے عیاں لا الہ الا اللہ

وہ گود فاطمہ زہرا کی ہو کہ ریگ تپاں
وہ صحن کعبہ ہو پشت رسولۖ یا کہ سناں
فضاۓ جنگ ہو یا ہو پیام امن و اماں
نہ دیکھے تیر نہ تلوار گر ہو حکم اذاں
حسین کا ہے بیاں لا الہ الا اللہ

حسین والوں کی پہچان ہے عزاداری
حسین والوں کی تو جان ہے عزاداری
حسین والوں کا ایمان ہے عزاداری
حسین والوں کا اعلان ہے عزاداری
حسینیت کی زباں ہے لا الہ الا اللہ

بسی ہے کرب و بلا تو کوئ جواز بھی ہے
لٹا ہے گلشن زہرا تو کوئ راز بھی ہے
یہ راز وہ ہے کہ خالق کو اس پہ ناز بھی ہے
براۓ ناز بہتــّر کی وہ نماز بھی ہے
اسی کا سر نہاں لا الہ الا اللہ

نماز نفس کی عزت ہے اولیاء کی قسم
نماز دین کی حرمت ہے اوصیاء کی قسم
نماز حسن شرافت ہے انبیاء کی قسم
نماز قصّہ وحدت ہے کبریا کی قسم
نماز خیرالعمل کی طرف بلاتی ہے
نماز عشق خدا کا ہنر سکھاتی ہے
نماز عـبد کو معبود سے ملاتی ہے
نماز گفتگو اللہ سے کراتی ہے
یہی نماز گناہوں سے بھی بچاتی ہے
نماز قبر تلک ساتھ ساتھ جاتی ہے

نماز وہ ہے جو فاقوں میں مصطفیۖ نے پڑھی
جگا کے اپنے ہی قاتل کر مرتضی نے پڑھی
جو چکیوں کی مشقت میں فاطمہ نے پڑھی
گلے لگا کے زہر کو جو مجتبی نے پڑھی

جو چاہتا ہے کہ عظمت نماز کی دیکھے
میرے حسین کا وہ سجدہ آخری دیکھے

پڑھی نماز جو عابد نے پشت ناقہ پر
ادا کیا جسے باقر نے سختیاں سہہ کر
بیاں کیا جسے جعفر نے بر سر منبر
رکوع میں برسوں رہے جس کے کاظم مضطر

رضا نے لب پہ سریع الرضا سجا کے پڑھی
تـقی نے تـقـوی بوطالبی بتا کے پڑھی
نقی نے نـقـوت باطل مٹا مٹا کے پڑھی
اور عسکری نے خبر آخری سنا کے پڑھی

پس نماز مصّـلہ پہ رو رہا ہے کوئ
امام عصر ہے اور حجت خدا ہے وہی

وہ خیمہ گاہ وہ سیدانیاں وہ ذکر خـدا
جہاں مصّـلہ پہ زینب، رباب اور فـضّـہ
حسن کی بیوہ، رقیہ، سکینہ کا سجـدہ
تمام بیبیاں کرتی تھیں صرف ایک دعا

میرے خدا ہميں منظور قحط آب رہے
حسین اپنے ارادوں میں کامیاب رہے
صـداۓ تـشنہ لـب لا الہ الا اللہ

مگر نماز سے پوچھوں کہ کربلا کیا ہے
حسین اور تیرا رشتہ وفا کیا ہے
کہا نماز نے سن لو میری بقا کیا ہے
بس ایک سجدہ شبیر کے سوا کیا ہے

حسین ہی کا گھرانہ بچا گیا مجھ کو
وہ خود اجڑ گیا لیکن سجا گیا مجھ کو

میان کرب و بلا آہ میں نے کیا دیکھا
گھرا لعینوں میں کنبہ رسولۖ کا دیکھا
بتول زادوں کو بے آب و بے غـذا دیکھا
بہاتا پانی ادھر لشکر جفا دیکھا

نماز پڑھتے رہے دل میں اضطراب نہ تھا
گزر گۓ تھے کئ دن کہ گھر میں آب نہ تھا

بتاؤں کیسے کہ دسویں کو میں نے کیا دیکھا
سحر ہوئ تو شہادت کا سلسلہ دیکھا
کسی کا سینہ تو زخمی کوئ گلا دیکھا
لب فرات علم خون میں بھرا دیکھا

حسین لاشوں پہ لاشے یونہی اٹھاتے رہے
اور اپنی راہ شہادت کی سمت جاتے رہے

کمر رکوع کی طرح تھی مگر حسین اٹھے
کہ اہل ظلم پہ لازم تھا اب کہ تیغ چلے
غضب کی تیغ چلی کوئ روکتا کیسے
امام وقت تھے اللہ کی رضا پہ رکے

اذان عصر سنی دیکھا عالم بالا
کہا حسین نے سبحان ربی الاعلی

آئ صداۓ غیب عبادت کا وقت ہے
اے فاطمہ کے لعل تلاوت کا وقت ہے
جنت ميں صف بندھی ہے امامت کا وقت ہے
بس بس حسین بس یہ عبادت کا وقت ہے

رکھ لی میان میں شہہ والا نے ذوالفقار
وہ ہول باندھے آۓ کماں دار دس ہزار

وہ بے شمار تیغوں کے پھل اور اک حسین
وہ سینکڑوں پیام اجل اور اک حسین

ڈوبے ہوۓ تھے خون میں گیسو حسین کے
تیروں نے چھان ڈالے تھے پہلو حسین کے

نیزے کا بن وہب نے پہلو پہ کیا وار
کاندھے پہ چلی ساتھ زرارہ کی بھی تلوار
ناوک بن کامل کا کلیجے کے ہوا پار
بازو میں در آیا تبر خولی خونخوار

تیغیں اپی ہوئيں جو برابر سے چل گئيں
غش کھا گیا قدم سے رکابیں نکل گئيں

کیوں کر کہوں کہ عرش خدا خاک پر گرا
خیرالنساء کا ماہ لقہ خاک پر گرا
ریتی پہ مصطفیۖ کے جگر کا لہو گرا
سید گرا امام گرا نیک خوں گرا

وہ ظلم ہورہا تھا کہ دنیا الٹتی تھی
جب زیر تیغ گردن شبیر کٹتی تھی
وہ تـند تیغ زينب و زہرا پہ چلتی تھی
ماتم کناں نماز تھی اور خون روتی تھی
جاری تھی یہ صدا کہ نبیۖ کا نواسہ ہوں
امّـاں پلاؤ پانی میں پیاسا ہوں

عجب ادا سے نمازی نماز پڑھ کے گیا
بہن کے سامنے نوک سناں پہ چڑھ کے گیا

نظر میں بھائ کے سجدے کی آب وتاب جو تھی
بہن نے سر کھلے مقتل میں مغربین پڑھی
نظر کے سامنے ہر مہہ لقہ کی لاش رہی
مگر جلے ہوۓ خیموں کی جاء نماز بچھی

غم حسین کی برچھی اٹھا گئ زينب
مگر نماز کی دنیا بسا گئ زینب


آن لائن فرش عزا
http://www.xainabbas.wordpress.com

Azadari @ Facebook Join to become E-Azadar
http://www.facebook.com/pages/Azadari-Facebook-Join-to-become-E-Azadar/41017642979

شائع کردہ

3 خیالات “Wording – Jahan Hussain Wahan La Ila’ha Ill’Allah – Nadeem Sarwar 2010” پہ

  1. سب سے پہلے ميں آپ کي خدمت ميں مؤدبانہ سلام عرض کرتا ہوں اور محرم الحرام کے سلسلے ميں آپ کو اور سب شيعيان حيدر کرار کو تعزيت پيش کرتا ہوں

    اور آپ کا بے حد شکريہ ادا کرتا ہوں کيونکہ يہ ايک بہت بڑي خدمت ہے اسي طرح ميں مشورہ دوں گا جتنا ہوسکتا ہے اس کام کو آگے بڑھائيں اس کي قوم کو بے حد ضرورت ہے اور بھي نوحے ٹائپ کريں مولا آپ کو جزائے خير دے

    خدا حافظ غلام رسول فيضي از قم المقدس ايران

    1. وعلیکم سلام محترم غلام رسول فیضی،
      میں بھی آپ کی خدمت میں محرم الحرام کی مناسبت سے دلی تعزیت و تسلیت پیش کرتا ہوں اور آپ کے مشورے کو شکریہ کے ساتھ قبول کرتے ہوۓ یہ عرض کرنا چاہوں گا کہ انشاء اللہ میں اس کام کو جاری رکھوں گا۔
      تمام مومنین و مومنات کو اپنی دعاؤں میں ضرور یاد رکھیے گا۔
      اللہ آپ کی توفیقات میں اضافہ فرماۓ۔ شکریہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s