Wording – Ameer-e-Lashkar-e-Hussain(a.s) – Sachey Bhai

صحفہ اول / اردو نوحے / علی محمد رضوی سچے / امیر لشکر حسین

نوحے خواں سچے بھائ
نوحہ خواں سچے بھائ

شاعر: مولانا حسن امداد
نوحہ خواں: سچے بھائی
سال : ——–
کمپوزر : زین عباس
اس نوحے کے تحریر کرنے میں اگر کوئی غلطی سرزد ہوگئی ہوں تو اس کے لیے میں معذرت خواہ ہوں

ویڈیو
اس ویڈیو میں یہ کلام ندیم رضا سرور نے پڑھا ہے۔


هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین
وفا بہ حد معجزہ امیر لشکر حسین
نہنگ قلزم وغا امیر لشکر حسین
خدنگ ترکش قضا امیر لشکر حسین
برنگ شاہ لافتی امیر لشکر حسین
جری دلیر باوفا امیر لشکر حسین

یہ ذوالفقار حیدری یہ شیر بیشئہ نجف
یہ تیغ تیز ہاشمی نشان جرات سلف
ہر اک کا مرکز نظر کفیل تشنگان طف
کنار نہر علقمہ تمام فوج کا ہدف
کسی سے پر نہ رک سکا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

بہادران صف شکن میں اس جری کے تذکرے
دلاوران تیغ زن میں اس جری کے تذکرے
ہر اک وفا کی انجمن میں اس جری کے تذکرے
رسول پاک کے چمن میں اس جری کے تذکرے
غرور آل مصطفیۖ امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

حسین میر قافلہ یہ قافلے کا پاسباں
کبھی قریب راحلہ قریب سارباں
کبھی بڑھا کے اپ کو وہاں جہاں عماریاں
کبھی سلام کے لیے حضور شاہ انس و جاں
ہر ایک سوہر ایک جا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

حسین کا اخی بھی ہے حسین کا غلام بھی
حسین کی سپر بھی ہے تبر بھی حسام بھی
حسین کی زرہ بھی ہے کماں بھی ہے سہام بھی
حسین حکم دیں اگر تو شمر سے کلام بھی
وگرنہ وہ کجا کجا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

فیں درست کرچکی ہے فوج شاہ مشرقین
یسار میں حبیب میں یمین میں رہیر قین
علم بہ دوش قلب میں ہے یہ علی کا نور عین
کبھی نظر ہے فوج پر کبھی نظر سوۓ حسین
کہ منتظر ہے اذن کا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

حسین اذن دیں اگر ابھی یہ سب کو دیکھ لے
ابھی عراق و شام کو ابھی حلب کو دیکھ لے
ابھی ابھی یہ کوفیان بے ادب کو دیکھ لے
مقابلہ جو آپڑے تو کل عرب کو دیکھ لے
مثال شاہ لافتی امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

بطرز خاص شیر حق بہ شکل شحنئہ نجف
بہ رعب و ادب ہاشمی بہ طور عہد ما سلف
بہ شدّو مد بہ کرّوفر علم بہ دوش سر بہ کف
الٹ کے آستین کو جدھر بڑھے الٹ دے وصف
پسر ‘خدا کے شیر’ کا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

جو مرضی حسین ہو تو فوج شام ہیچ ہے
یہ دشمنوں کا اجتماع یہ اژدھام ہیچ ہے
فرات پر یہ بندشیں یہ انتظام ہیچ ہے
علی کے گھر سے بدر کا یہ انتقام ہیچ ہے
دکھادے زور لافتی امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین


اشارہ امام ہو تو فتح میں دھرا ہے کیا
شعاع مہر کے لیے یہ شام کی گھٹا ہے کیا
فرات تک نہ جانے دے کسی میں حوصلہ ہے کیا
علی کے شیر کے لیے یہ جنگ کربلا ہے کیا
الٹ دے تخت شام کا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

یزید بد نہاد سے سکون ذات چھین لے
محفاظین نہر سے حق حیات چھین لے
جو مرضی امام ہو ابھی فرات چھین لے
فرات کیا ہے یہ وہ ہے کہ کائنات چھین لے
بڑا بلند حوصلہ امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

مگر یہاں تو حکم ہے کہ بس علی کے شیر بس
حسین اپنی زندگی سے ہوچکا ہے سیر بس
قریب وقت عصر ہے بس اب مرے دلیر بس
ہمارے کوچ میں کہیں مزید ہو نہ دیر بس
کرے گا تابہ کے وغا امیر لشکر حسین
هژبر دشت نینوا امیر لشکر حسین

شائع کردہ

3 خیالات “Wording – Ameer-e-Lashkar-e-Hussain(a.s) – Sachey Bhai” پہ

اپنی راۓ دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s